11 غیر قانونی تارکین وطن کی ملائشیا میں داخلے کی کوشش ناکام

ملائشیا – ایک غیر ملکی شخص کو 11 غیر قانونی تارکین وطن کے ساتھ حراست میں لے کیا گیا۔ یہ شخص غیر قانونی تارکین وطن کو ملائشیا لانے میں ماسٹر مائنڈ تھا اور کافی عرصے سے امیگریشن اور پولیس کو متعدد کیسز میں مطلوب تھا۔

یہ بھی پتا چلا ہے کہ اس کے پاس اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) کا کارڈ ہے۔ یہ تعمیراتی مزدور کے طور پر کام کرتا ہے۔

کوبانگ پاسو ڈسٹرکٹ پولیس چیف، سپرنٹنڈنٹ روزی ابو حسن نے کہا، تفتیش سے پتا چلا ہے کہ بٹر ورتھ میں رہنے والے 44 سالہ مشتبہ شخص نے تمام غیر ملکیوں کو پینانگ لانے کے لیے 500 رنگٹ فی کس اجرت ڈیمانڈ کی۔

خیال کیا جاتا ہے کہ اس نے کل سہ پہر بٹر ورتھ میں ایک شخص سے کار ادھار لی تھی۔ غیر ملکیوں کو لانے کی ادائیگی اسائنمنٹ کے بعد ہی کلیئر ہونی تھی۔

انہوں نے کہا، “کار میں معائنہ کرنے پر میانمار کی 19 اور 29 سال کی دو خواتین کے ساتھ ساتھ 25 سے 37 سال کی عمر کے نو مرد پائے گئے۔”

روزی نے کہا، مزید تفتیش سے پتا چلا ہے کہ تمام غیر ملکی کل شام 7 بجے ملک میں داخل ہوئے تھے۔ اور خیال کیا جاتا ہے کہ انہیں تھائی لینڈ کی سرحد سے بکیت کیو ہیتم تک پہنچنے کے لیے دو تھائی مردوں کی رہنمائی حاصل تھی۔

“ملائشیا کی سرحد پار کرنے کے بعد، تمام غیر ملکیوں نے جنگل میں انتظار کیا اور دونوں تھائی باشندے اپنے ملک لوٹ گئے۔

انہوں نے بتایا کہ “ہم نے ایک سبز پروٹون ویرا کار، چابیوں کا ایک سیٹ کے ساتھ ساتھ تحقیقات میں مدد کے لیے ایک ریموٹ کنٹرول ڈیوائس اور ایک موبائل فون بھی قبضے میں لے لیا،” انہوں نے بتایا کہ اس کیس کی تحقیقات انسداد دہشت گردی کی دفعہ 26A کے مطابق کی جائے گی۔ ٹریفکنگ ان پرسنز ایکٹ (ATIPSOM) 2007 اور ایکٹ امیگریشن 1959/63 کی دفعہ 6(1)(c) بھی لاگو ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *