جسم فروشی میں ملوث 15 خواتین گرفتار، 5 غیر ملکی مردوں کو بھی حراست میں لے لیا گیا۔

میلاکا ریاست کے امیگریشن ڈپارٹمنٹ نے “اوپس گیگر” کے ذریعے ایک نائٹ کلب پر چھاپہ مارا ہے۔ آپریشن گزشتہ رات تمن میلاکا رایا کے آس پاس کیا گیا۔  یہ آپریشن 13 ستمبر 2023 کو 25 افسران کی فورس کے ساتھ شروع کیا گیا۔

 

یہ انفورسمنٹ آپریشن موصول ہونے والی شکایات کے ماخذ اور ان غیر ملکی خواتین کی موجودگی کے بارے میں کی گئی انٹیلی جنس کے نتائج پر مبنی ہے۔ خواتین کے بارے میں شبہ ہے کہ وہ نائٹ کلب میں “پرکشش” رہتی ہیں، جنہوں نے جسم فروشی کرنے والی لڑکیوں کے طور پر کام کرنے کے لیے سوشل وزٹ پاس استعمال کیے ہیں۔

کلب کے گاہکوں سمیت کل 45 افراد کو چیک کیا گیا اور اس کے نتیجے میں امیگریشن نے پاس/پرمٹ کی شرائط کی خلاف ورزی کرنے اور درست ویزا نہ ہونے کے شبہ میں 05 بنگلہ دیشی مرد اور 15 تھائی خواتین پر مشتمل کل 20 غیر ملکیوں کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کی۔ حراست میں لیے گئے تمام افراد کی عمریں 25 سے 40 سال کے درمیان ہیں۔  گرفتار ہونے والوں میں 05 غیر ملکی مرد شامل ہیں جو کلب کے عملے کے طور پر کام کرتے ہیں اور 15 غیر ملکی خواتین جو ڈانسر اور کسٹمر سروس کے طور پر کام کرتی ہیں۔  02 مقامی افراد کو بھی گرفتار کیا گیا جن پر احاطے کے نگراں اور منیجر کے طور پر کام کرنے کا شبہ تھا۔  مزید تفتیش میں مدد کے لیے کل 12 فارم 29 (گواہی سمن) صارفین کو جاری کیے گئے ہیں۔

 چھاپے کے دوران کچھ غیر ملکیوں نے پچھلے دروازے سے فرار ہونے کی کوشش کی اور کچھ کلب میں انجوائے کر رہے تھے۔  اہلکاروں نے صورتحال پر قابو پالیا اور ان سب کو گرفتار کر لیا گیا۔

 امیگریشن نے بہت سے غیر ملکیوں کا پتہ لگایا جنہوں نے ملائیشیا میں قیام کی سہولت کا غلط استعمال کرتے ہوئے اپنے آبائی ملک واپس نہ جا کر غیر قانونی طور پر کام کیا اور غیر اخلاقی سرگرمیوں میں ملوث رہے۔  احاطے کے مالکان اور آجروں کے خلاف بغیر سمجھوتہ کے سخت کارروائی کی جائے گی جو درست سفری دستاویزات اور پاسپورٹ/ ورک پرمٹ کے بغیر غیر ملکیوں کو ملازمت دیتے ہیں اور جان بوجھ کر غیر ملکیوں کو تحفظ فراہم کرتے ہیں جنہوں نے امیگریشن ایکٹ 1959/63 (ایکٹ 155) کی خلاف ورزی کی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *